ذمہ دار شہری بنیئے

ذمہ دار شہری بنیے

موجودہ صورتحال میں ، اس میں کوئی شک نہیں ، یہ ضروری ہے کہ گھر میں ہی رہا جائے اورکثرت سے  ہاتھ دھونے اور سماجی دوری کی حکمت عملی پر عمل کیا جائے۔ لیکن ہمیں وبائی امراض کی وجہ سے بہت سے لوگوں کی روزانہ کی اجرتوں کے بارے میں سوچنے کی ضرورت ہے۔ ان میں سے بیشتروہ ہیں جن کے پاس مشکل وقت کے لیے شاید ایک دن کے وسائیل بھی نا ہوں  ، کیونکہ ان کی جو اجرت بنتی ہے وہ ان کی روز مرہ کی بقا کے لئے بمشکل ہی کافی ہوتی ہے۔ حکومتیں تن تنہا ان لوگوں کی مدد نہیں کرسکتی ہیں۔ ہمیں ان لوگوں کی مدد کے لئے حکومت کے ساتھ کھڑے ہونے کی ضرورت ہے۔ لہذا ، جن کے پاس مالی وسائیل ہیں ، گھر سے کام کر رہے ہیں ، یا  ان کے پاس ملازمت ہے ان لوگوں کو ایسے لوگوں کی مدد کرنا چاہئے جو اس مشکل سے دوچار ہیں۔

اس نازک وقت میں ، ہر ایک پر ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ وہ اس صورتحال سے نپٹنے کے لئے ایک نفسیاتی – معاشرتی مدد کے طریقہ کار وضع کرنے کے لئے معاشرے میں شعور بیدار کرنے کے لئے بھر پور کردار ادا کریں۔ ہمیں آگے آنا چاہئے اور اپنے رشتہ داروں ، دوستوں اور ساتھیوں کے ساتھ انفرادی گفتگو کا آغاز کرنا چاہئے تاکہ ان کے ذہنی تناؤ کو کم کرنے اور تعلیم دینے اور ذہنی صحت سے متعلق ان کے سوالات کا جواب دینے میں مدد ملے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *