سماجی دوری (سوشل ڈسٹنسنگ) کیا ہے



سماجی دوری (سوشل ڈسٹنسنگ) جسے “جسمانی فاصلہ” بھی کہتے ہیں ، کا مطلب ہے کہ اپنے اور اپنے گھر سے باہر دوسرے لوگوں کے مابین فاصلہ رکھیں۔

  سماجی یا جسمانی دوری میں دوسرے لوگوں سے کم سے کم فاصلہ 6 فٹ (2 میٹر) ہو

 گروہوں میں جمع نہ ہوں

 پرہجوم مقامات سے دور رہیں اور بڑے اجتماعات سے اجتناب کریں

 کوویڈ کی روک تھام کے لئے روزمرہ اقدامات کے علاوہ ، اپنے آپ اور دوسروں کے درمیان فاصلہ رکھنا ایک بہترین ذریعہ ہے جس سے ہم اس وائرس سے بچنے کے ساتھ ساتھ مقامی طور پر اور ملک اور دنیا بھر میں اس کے پھیلاؤ کو کم کرسکتے ہے۔

 اگر کوویڈ ۱۹ آپ کے علاقے میں پھیل رہا ہے تو ، ہر ایک کو اپنے گھر سے باہر کےافراد کے ساتھ گھر کے اندر اور  بیرونی جگہوں پر قریبی رابطے کو محدود کرنا چاہئے۔  چونکہ لوگ یہ جاننے سے پہلے کہ وہ بیمار ہے اس وائرس کو پھیلا سکتے ہیں، لہذا ، یہ ضروری ہے کہ جب بھی ممکن ہو تو دوسروں سے دور رہیں ، چاہے آپ میں اس کی علامات نہ ہوں۔  معاشرتی دوری خاص طور پر ان لوگوں کے لئے اہم ہے جن کو بہت زیادہ بیمار ہونے کا خطرہ ہوتا ہے۔

سماجی دوری کی مشق کیوں کریں




کوویڈ ۱۹بنیادی طور پر ان لوگوں میں پھیلتا ہے جو طویل عرصے تک قریبی رابطے میں ہوتے ہیں( تقریبا 6 6 فٹ کے اندر)۔  پھیلاؤ اس وقت ہوتا  ہے جب ایک متاثرہ شخص کھانسی ، چھینک ، یا بات چیت کرتا ہے تو  بوندیں اس کے منہ یا ناک سے ہوا میں چلی جاتی ہیں  اور پھر قریبی لوگوں کے منہ یا ناک میں داخل ہو جاتی ہیں۔ یہ بوندیں سانس کے ذریعے پھیپھڑوں میں بھی داخل ہوسکتی ہیں۔  حالیہ مطالعات سے پتہ چلتا ہے کہ وہ لوگ جو متاثرہ ہیں لیکن کوویڈ ۱۹کی علامات نہیں رکھتے ہیں وہ بھی اس کے پھیلاؤ کا سبب بن سکتے ہیں۔

 یہ ممکن ہے کہ کوئی فرد کسی ایسی سطح یا شے کو چھونے سے کوویڈ ۱۹ حاصل کر سکے جس پر وائرس ہے اور پھر اپنے ہی منہ ، ناک یا آنکھوں کو چھونے سے۔  تاہم ، ایسا نہی ہے کہ وائرس کے پھیلنے کا یہ واحد طریقہ ہے۔  کوویڈ ۱۹سطح پر گھنٹوں یا دنوں تک زندہ رہ سکتا ہے جو کہ  سورج کی روشنی اور نمی جیسے عوامل پر منحصر ہے۔  سماجی دوری متاثرہ افراد اور آلودہ سطحوں سے رابطے کو محدود کرنے میں مدد دیتی ہے۔